Home / خبریں / اوکاڑہ اور دیپالپور سب کیمپس میں مارننگ کے ساتھ ساتھ ایوننگ پروگرام میں بھی داخلے شروع کئے جائیں گے، وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی
depalpur news live

اوکاڑہ اور دیپالپور سب کیمپس میں مارننگ کے ساتھ ساتھ ایوننگ پروگرام میں بھی داخلے شروع کئے جائیں گے، وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی

دیپالپور (فہیم احمد غوری سے) زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر محمد اشرف (ہلال امتیاز) نے کہا ہے کہ یونیورسٹی کے سب کیمپس دیپالپور اوکاڑہ میں نئے تعلیمی سیشن سے بی ایس سی (آنرز) ایگرکلچرل سائنسز کے ساتھ ساتھ زوالوجی‘ باٹنی‘ فزکس اور کیمسٹری کے چار سالہ ڈگری پروگرام بھی شروع کئے جا رہے ہیں تاکہ مقامی نوجوانوں کو دنیا کی بہترین جامعات سے فارغ التحصیل اساتذہ کی زیرنگرانی معیاری تعلیم ان کی دہلیز پر فراہم کی جا سکے،

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اوکاڑہ کیمپس کا دورہ کرتے ہوئے کیا،اس موقع پر سب کیمپس میں مون سون شجرکار ی مہم کا افتتاح بھی کیا گیا اور کالج پرنسپل ڈاکٹر طارق عزیز کی طر ف سے سب کیمپس میں جاری تعلیمی و تحقیقی سرگرمیوں پر بریفنگ دی گئی، ڈاکٹر محمد اشرف نے کہا کہ حکومت کی طرف سے سب کیمپس کی تعمیر اور یہاں بنیادی ڈھانچے کی ترقی اور مثالی تعلیمی وتحقیقی ماحول فراہم کرنے کیلئے کروڑوں روپے کی سرمایہ کاری کی گئی ہے لہٰذا ان سہولیات سے مقامی نوجوانوں کومستفید کرنا ہمارا اولین ایجنڈا ہونا چاہئے،

انہوں نے کہا کہ اوکاڑہ فوڈ انڈسٹری‘ آلو اور مکئی کی مثالی پیداوار کے حوالے سے جانا جاتا ہے لہٰذا یہاں کی مقامی انڈسٹری سے وابستہ لوگوں کی پیشہ وارانہ استعدادکار میں اضافہ اور انہیں مزید ہنر یافتہ بنانے کیلئے سب کیمپس ڈگری پروگرامز کے ساتھ ساتھ شارٹ کورس اور ڈپلومہ جات کے ذریعے اپنی خدمات ان تک پہنچائے،

انہوں نے پرنسپل ڈاکٹر طارق عزیز کو ہدایت کی کہ سب کیمپس میں مارننگ کے ساتھ ساتھ ایوننگ پروگرام میں بھی داخلے شروع کئے جائیں تاکہ دستیاب سہولیات کا بہترین استعمال یقینی بنایا جا سکے، ان کا کہنا تھا کہ مقامی انڈسٹری کے ساتھ مربوط تعلقات استوار کرتے ہوئے انہیں درپیش مسائل و مشکلات کے پائیدار حل کیلئے زیرتعلیم نوجوان افرادی قوت کے ذریعے اپنی تحقیقات کا دائرہ ان تک بڑھایا جائے تاکہ نوجوانوں کیلئے مقامی سطح پر ہی روزگار کے مواقع بھی پیدا کئے جا سکیں،

انہوں نے کیمپس کی مختلف لیبارٹریوں اور ٹیچنگ رومز کا جائزہ لیتے ہوئے کہا کہ حکومت کی طرف سے سب کیمپس کیلئے خاطر خواہ وسائل فراہم کئے جا رہے ہیں تاہم ضرورت اس امر کی ہے کہ اس ادارہ کو بے مثال خدمات اور تعمیری سرگرمیوں کا گہوارہ بناتے ہوئے اکاڑہ کے طو ل و عرض میں متعارف کروایا جائے۔انہوں نے مون سون میں شجرکاری مہم میں بھرپور حصہ لینے اور زیادہ سے زیادہ درخت لگانے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے