Home / اردو کالمز / جھوٹ، ریاست کا سب سے بڑا ہتھیار
urdu columns

جھوٹ، ریاست کا سب سے بڑا ہتھیار

تحریر : ارشد فاروق بٹ
ایٹم بم سے بھی زیادہ خطرناک ہتھیار جو جب، جہاں ، جیسے، جس پر مرضی چلایا جا سکتا ہے. جھوٹ ہمارا قومی ہتھیار بن چکا ہے. مارشل لا لگانا ہو، کسی سیاستدان کو پھانسی لگانا ہو، کسی جج کو رگڑا لگانا ہو یا پولیس مقابلے میں کسی کو پار کرنا ہو تو فورا ایک ہی منصوبہ ذہن میں آتا ہے، جھوٹ کا سہارا لیا جائے.

اسلام کے نام پر حاصل کی گئی ریاست پاکستان کے تمام ادارے حسب توفیق اسی جھوٹ کے سہارے عوام کا خون پیتے رہے ہیں. قیام سے اب تک لاکھوں بے قصور اسی جھوٹ کے سہارے سرکاری بوٹوں تلے مسل دیے گئے اور نہ جانے کتنے ابھی تک ان بوٹوں تلے سسک رہے ہیں.

سامراجی دور میں قائم کیے گئے اداروں کے ہاتھ اب ہماری گردنوں تک آ گئے ہیں. مگر مجال ہے جو ہم اف بھی کر جائیں. ہم نے تو ہر دور میں ہر سامراج کو خوش آمدید کہا ہے، ہر آمر کی آمد پہ مٹھائیاں بانٹی ہیں، اور حملہ آوروں کی خوشنودی میں مذہب تک کو گروی رکھ دیا.

چشم تصور میں میں 19 جنوری کو ساہیوال میں پیش آئے سانحے کو دیکھ سکتا ہوں جس میں ریاست پاکستان کے ایک معزز ادارے کے غنڈوں نے ایک بے قصور خاندان کو دن دیہاڑے خون میں نہلا دیا، اس کے بعد اس معزز ادارے کو جو اب پاکستان کا متنازعہ ترین ادارہ بن چکا ہے جھوٹ کے سہارے کی ضرورت پڑی، بیان جاری کیا گیا کہ ڈاکو بچوں کو اغوا کر کے لے جا رہے تھے، بچوں کو بازیاب کرا لیا گیا. جلد ہی غلطی کا احساس ہونے پر نیا جھوٹ داغا گیا، پھر جھوٹ پہ جھوٹ اور ریاست پاکستان ان غنڈوں کا ابھی تک بال بھی بیکا نہیں کر سکی. بابا جی فرماتے ہیں پاکستان میں جس کیس کا فیصلہ نہیں ہوتا اس کے پیچھے ایک ہی طاقت رکاوٹ ہوتی ہے اور وہ سب جانتے ہیں.

حال ہی میں پاکستان مسلم لیگ ن کی گاڑی سے بھاری مقدار میں منشیات کا برآمد ہونا بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے. رانا ثناء اللہ بدنام زمانہ سیاستدان ہیں لیکن ان کے بدترین مخالف بھی اس الزام کو درست نہیں مانتے. ان کو آسانی سے سانحہ ماڈل ٹاؤن کے مقدمے میں لٹکایا جا سکتا تھا. لیکن شاید پکڑنے والوں کا مقصد انہیں لٹکانا نہیں ہے.

جھوٹ کی ہمارے ہاں پذیرائی کو دیکھتے ہوئے خدشہ ہے کہ حکومت پاکستان اسے ہمارے سکول سلیبس میں ہی شامل نہ کر دے. جہاں کچے ذہنوں کو سکھایا جائے کہ اپنے اوپر آئی بلا کو ٹالنے کے لیے سب سے مؤثر اور آزمودہ قومی ہتھیار جھوٹ کو کب ، کیسے اور کس کے خلاف استعمال کرنا ہے.

About Muhammad Saeed

Avatar
I am Muhammad Saeed and I’m passionate about world and education news with over 4 years in the industry starting as a writer working my way up into senior positions. I am the driving force behind Sahiwal News with a vision to broaden the company’s readership throughout 2019. I am an editor and reporter of this website. Address: Mehar Abad Colony, Chichawatni, Distt. Sahiwal, Punjab, Pakistan Phone: (+92) 300-777-2161 Email: admin@sahiwalnews.com.pk

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے